Jab Noor e Tajalla Ka Ezhaar Huwa Maloom

Jab Noor e Tajalla Ka Ezhaar Huwa Maloom
Deedar Ke Taalib Ka Esrar Huwa Maloom

جب نورتجلی کا اظہار ہوا معلوم
دیدار کے طالب کا اصرار ہوا معلوم

کیا حسن مشیت ہے ، کیا حسن تماشا ہے
انکار کی عظمت میں ، اقرار ہوا معلوم

اک دید حجابوں میں ، اک دید ہے بے پردہ
دلدار کی مرضی ہے ، دیدار ہوا معلوم

یہ حسن کی مرضی تھی ہر حال عیاں ہونا
تخلیق کی صورت میں اظہار ہوا معلوم

ہر شے کی حقیقت میں اس نور کا جلوہ ہے
یہ دیدہ باطن سے اک بار ہوا معلوم

جس دم تھا رگ و پے کا ہر ریشہ تماشا مست
اس عالم حیرت میں وہ یار ہوا معلوم

ہر حال میں دل خاور، با یار رہے با کار
ساز دل غافل تو بے تار ہوا معلوم

خاورسہروردی
Khawar Soharwardy

One thought on “Jab Noor e Tajalla Ka Ezhaar Huwa Maloom

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *