Na Chehro Khiyal e Muhammad Main Gum Hun

Na Chehro Khiyal e Muhammad Main Gum Hun
Ba Een Rukh e Wisaal e Muhammad Main Gum Hun

نہ چھیڑو خیالِ محمد میں گم ہوں
بہ ایں رخ وصالِ محمد میں گم ہوں

ہمہ وصف موصوف نورٌ من اللہ
جلال و جمال محمدؐ میں گم ہوں

اَمینے ،حکیمے، رحیمے، کریمے
ہمی خوش خصالِ محمدؐ میں گم ہوں

سدا نعت گوئی، سدا نعت خوانی
سدا قیل و قالِ محمد ؐ میں گم ہوں

ہمہ آفتابم، مہا ماہتابم
کہ حسن و جمالِ محمدؐ میں گم ہوں

نہ ہنگامِ مستی نہ ایں ہوشیاری
غلامانِ آلِ محمدؐ میں گم ہوں

مرے حالِ ظاہر ہی اے ہنسنے والو
دریں حال، قالِ محمدؐ میں گم ہوں

سراپا محمدؐ کے نقش قدم پر
سراپا مالِ محمد ؐ میں گم ہوں

دما دم نئے ولولے زندگی کے
کہ دائم خیالِ محمد میں گم ہوں

حقائق کا عرفاں، معارف کا طوفاں
کہ جامِ سفالِ محمدؐ میں گم ہوں

ہے محشر میں ہر کوئی پرسش پہ لرزاں
مگر میں خیالِ محمد میں گم ہوں

خوشا بخت خؔاور قلندر کے صدقے
میں قرب و وصالِ محمد میں گم ہوں

خاورسہروردی
Khawar Soharwardy

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *