Hasti Ka Intizam Muhammad Ke Dam Se Hai

Hasti Ka Intizam Muhammad Ke Dam Se Hai
Sara Yeah Ahtamam Muhammad Ke Dam Se Hai

 

ہستی کا انتظام محمدؐ کے دم سے ہے
سارا یہ اہتمام محمدؐ کے دم سے ہے

جبریل،عرش،لوح وقلم ، فرش الکتاب
ان سب کا احترام محمد ؐ کے دم سے ہے

محرم تھا کون پہلے اس سر بستہ راز کا
ہر سُو خدا کا نام محمدؐ کے دم سے ہے

انساں نے جو کیا ہے نیابت کا حق ادا
اس کا حسیں مقام محمدؐ کے دم سے ہے

اللہ رے شانِ رفعتِ دکرِ حبیبِ پاک
حمد و ثناء تمام محمدؐ کے دم سے ہے

اے طالبانِ بادہ عرفاں! خدا گواہ
پُر معرفت کا جام  محمدؐ کے دم سے ہے

پیغام دے رہا ہے یہ صدیق کا خلوص
عشاق کا دوام محمدؐ کے دم سے ہے

اے سالکانِ راہِ طریقت تمہیں ہے علم ؟
اس راہ میں خرام  محمدؐ کے دم سے ہے

جویانِ حق کو مژدہ  دیدار ذوالجلال
یہ سُرمدی پیغام محمدؐ کے دم سے ہے

قرآں کی دل نشین تلاوت سے ہر کوئی
اللہ سے ہم کلام محمدؐ کے دم سے ہے

لا تَقْنَطُوْ ا سے عاصیوں کی ہر خطا معاف
یہ اِذنِ عفوِ عا م محمدؐ کے دم سے ہے

عصیاں کے داغ دامنِ دل پر لئے ہوئے
حاضر ہوا ہوں ، کا م محمدؐ کے دم سے ہے

صبرِ حسینؓ  صدقِ حسنؓ علمِ بو ترابؓ
خاؔور یہ فیض عا م محمدؐ کے دم سے ہے

خاورسہروردی
Khawar Soharwardy

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *